Étiquettes » Akbar

Feudalism in India - An Analysis

(Note: Though there are many notable writers who have written about feudalism in India, I have mainly used R.S. Sharma’s writings in this analysis)

Feudalism, as the word comes, people connect it with the hierarchical socio-economic system of Medieval Europe. 703 mots de plus

History

Weapons, Technology & Power

This week we looked at a range of objects – of diverse type, time period and provenance. Each object’s significance lay in its illustration of larger histories, which continue to impact the contemporary world in crucial ways. 98 mots de plus

Agra – The Monument City

Day 2:

Agra is truly a fortified city. One can find some sort of palaces or forts everywhere around the city. Sometimes, the houses too look like forts or quarters inside a fortified city. 551 mots de plus

Uttar Pradesh

Akbar| The most powerful emperors of the Mughal Dynasty.

Akbar was one of the most powerful emperors of the Mughal Dynasty and the greatest Muslim ruler who built a large empire expanding over most of the Indian subcontinent. 474 mots de plus

Blogger

Akbar And Birbal

Akbar and Birbal went out without the usual retinue, attired like merchants on visit to a far-out part of the kingdom.

At the town market, 138 mots de plus

Wisdom

بلند پایہ انشا پرداز اور مؤرخ ابُو الفضل

جلال الدین اکبر بادشاہ کے دربار میں بڑے بڑے ماہرین فن موجود تھے، لیکن ابو الفضل کی انشا پردازی اور فصاحت اپنی مثال نہ رکھتی تھی۔ اکبر اپنے اس وزیر دربار سے بے حد محبت کرتا تھا۔ ابو الفضل اس زمانے کے ایک مشہور عالم و معلم شیخ مبارک ناگوری کے ہاں 1551ء میں پیدا ہوا۔ اُس نے اپنے بھائی فیضی کے ساتھ اپنے باپ ہی سے تمام علوم کی تحصیل کی اور جوان ہو کر اپنے باپ کے تمام حریفوں کو شکست دے کر دربار تک رسائی حاصل کی۔ ان دونوں بھائیوں نے بہت جلد اکبر کے مزاج میں دخل حاصل کر لیا۔ ابو الفضل فارسی زبان کا ممتاز انشا پرداز اور عہد اکبری کا سب سے بڑا مورخ تھا۔ اکبر نامہ اس کی ایک لازوال تاریخ ہے، جس سے مؤرخین کو اکبر کے دور کی تمام تفصیلات صحیح صحیح معلوم ہوتی ہیں۔

اس کتاب کا تیسرا حصہ آئین اکبری ہے، جس میں ابو الفضل نے اکبر کی سلطنت کے آئین، اس کے مذہب اور ملک کے نظم و نسق کا پورا پورا حال لکھا ہے اور درباری و عوامی زندگی کے تمام پہلوؤں کو روشن کیا ہے۔ ابو الفضل کے مکتوبات کا مجموعہ تین حصوں میں آج بھی مشرقی زبانوں کے امتحانات میں نصاب کا مقام رکھتا ہے۔ ابو الفضل اعلیٰ درجے کے شعرا و ادبا کا بے حد قدر دان تھا اور دربار میں سفارش کر کے ان کو عطیات و وظائف دلایا کرتا تھا چونکہ دربار اور محل کے تمام معاملات میں ابو الفضل بے حد دخیل تھا اور اکبر کو اس کی دانائی و خیر خواہی پر بڑا اعتماد تھا، اس لیے اکبر کا ولی عہد جہانگیر اسے پسند نہ کرتا تھا بلکہ یہاں تک کہا جاتا ہے کہ ابو الفضل کا قتل جہانگیر ہی کے اشارے سے ہوا تھا۔ ابو الفضل 1602ء میں دکن سے واپسی پر ایک سپاہی کے ہاتھ سے مارا گیا۔

(سیموئل نسنسن اور ولیم اے ڈی وٹ کی تصنیف سے مقتبس، ترجمہ : مولانا عبد المجید سالک ).

Abu Al-Fazal Ibn Mubarak

Praise be to Allah 💖

Before we begin our Salah, we start with the praise of Allah Allahu Akbar. The purpose of this is to acknowledge that the One we are standing in front of us, is greater than anything else that is occupying us in this world. 177 mots de plus